Archive for March, 2009

March 29, 2009

ابھرتی محنت کش طبقے کی تحریک

نیا بھر کے محنت کشوں کو واضح ہو گیا ہے 2008 ؁ء کا مالیاتی بحران صرف ایک آغاز تھااورتاریخ کے بد ترین بحران کا ابھی صرف آغاز ہورہا ہے۔ جہاں کروڑہا محنت کشوں کی نوکریاں خطرے میں ہیں ۔ ریاست کی طرف سے اربوں ڈالرز کے بیل آؤٹ کے باوجود سرمایہ دارمطمئن نہیں اور چاہتے ہیں کہ اس بحران کی قیمت محنت کش عوام ادا کریں۔

read more »

Advertisements
March 29, 2009

پیپلز پارٹی کی حکومت یا محنت کش طبقے کا مفاد

پیپلز پارٹی کے ایک سالہ دور کے دوران عوام کے بنیادی مسائل حل ہونے کی بجائے بڑھتے ہی جارہے ہیں۔حکومت امریکی سامراج کی خدمت گزاری میں مصروف ہے اور پختونخواہ میں اپنے ہی عوام پر طالبان کے نام پر بمباری کر رہی ہے۔عالمی معاشی بحران کے باوجود حکمران طبقہ انہی پالیسیوں کا نفاذ کر رہا ہے‘جس کی وجہ سے دنیا موجودہ معاشی بحران کا شکار ہے۔پاکستان میں یہ پالیسیاں محنت کش عوام کی زندگیاں اذیت ناک بنا رہے ہیں جو پہلے ہی مہنگائی ، غربت اور بے روزگاری سے تنگ تھے۔دوسری طرف پچھلے ایک سال میں محنت کش طبقے نے مختلف شہروں میں اپنی طاقت کا مظاہرہ کیا ہے۔چاہے یہ فیصل آباد کے پاور لومز کے محنت کش ہوں یا ملتان کے اور مختلف چھوٹی بڑی تحریکیں پورے ملک میں ابھر رہی ہیں۔کبھی ان میں شدت آجاتی ہے اور کبھی یہ دھیمی پڑ جاتی ہیں۔اس کی وجہ یہ ہے کہ حکمران طبقہ کمزور ہے ۔لہٰذا محنت کشوں کو چھوٹ دینے پر مجبور ہیں اور ایک کے بعد دوسرے سیکٹر میں احتجاج ہو رہا ہے۔حکمران طبقے کی کمزوری18فروری کے انتخابات سے واضح ہو گئی تھی۔اسکے بعد انہوں نے یونین حقوق بحال کرنے کا اعلان اور مزدوروں کے لئے مراعات کے اعلانات کر کے ان کے اعتماد میں اضافہ کردیا تھا۔جو پہلے احتجاج کر چکے تھے وہ دوبارہ سوچ رہے ہیں اور باقی احتجاج کرنے کی تیاریاں کر رہے ہیں۔ضرورت اس امر کی ہے کہ مختلف اداروں میں جو احتجاجات ہو رہے ہیں۔ ان کو آپس میں منسلک کر کے ایک دن کی ہڑتال کی کال دی جائے تاکہ حکمرانوں کو مجبور کیا جاسکے کہ وہ مہنگائی کے مطابق ہی محنت کشوں کی تنخواہوں میں اضافہ کریں اور نجکاری کو روکا جا سکے۔

read more »

March 29, 2009

وکلاء تحریک: لانگ مارچ کو کامیاب بناؤ

وکلاء تحریک کی جدوجہد کے نتیجے میں قائم ہونے والی ’’جمہوری حکومت‘‘ نے اپنے تمام تر وعدوں کے باوجود نہ تو چیف جسٹس افتخار چوہدری کوبحال کیا ہے اور نہ ہی روٹی ،کپڑا اور مکان کا وعدہ پورا کیا ہے البتہ دہشت گردی کے خلاف جنگ ،نجکاری،مہنگائی اور بے روز گاری پرحکومت ہر معاملے میں مشرف آمریت کا تسلسل ہی ثابت ہو رہی ہے۔

read more »

March 1, 2009

مالیاتی بحران

مالیاتی بحران نے سرمایہ دارانہ نظام کی ناکامی ظاہر کر دی امریکہ اور یورپی ممالک کی طرف سے ہزاروں ارب ڈالر کے بیل آؤٹ پلان کے باوجود پچھلے عرصے میں222 40 سے زائدسرمایہ برباد ہو چکا ہے ۔
معیشت دان جو فری مارکیٹ اکنامی کے گن گار ہے تھے ‘ بحران کے متعلق بات کرنا پسند نہیں کرتے تھے اور پچھلے ڈیڑھ سال سے جاری بحران کے باوجود پر امید تھے کہ مارکیٹ اپنی اصلاح خود کرے گی۔ اب نا امیدی اور خوف میں مبتلا ہیں ایلین گرین سپین جو امریکن فیڈرل ریڈرو کا سابق چیئرمین تھا وہ اب اس بحران کے بعد اس نظام بنیاد پر شکوک ظاہر کر رہا ہے اور فرانس کے صدر سرکوزی جو نیو لبرل اکانومی کا چیمپئین تھا کہ بقول فری مارکیٹ اکانومی کا عہدختم ہو گیا ہے۔

read more »