کے ای ایس سی کے محنت کشوں کی جدوجہدکی حمایت میں کراچی میں مکمل ہڑتال

3جون کو کے ای ایس سی کے محنت کشوں کی جدوجہد کی حمایت میں ہڑتال کی کال دی گی۔جس کے نتیجے میں پورا کراچی شہر بند رہا،یہ ایک اہم کامیابی ہے جو مزدور تحریک نے ایک عرصے کے بعد حاصل کی ہے۔
کے ای ایس سی کی انتظامیہ نے4000سے زائد محنت کشوں کو فاضل قرار دئے سرپلس پول میں ڈال رکھا ہے،چند ماہ پہلے جب ان محنت کشوں کو برطرف کیا گیا تھا تو محنت کشوں نے کے ای ایس سی کے ہیڈکواٹر پر قبضہ کرلیا تھا۔چار دن کی جدوجہد اور عوامی دباؤ پر ان محنت کشوں کو بحال کرنا پڑا۔
مگر انتظامیہ مختلف ہتکنڈوں کے زریعے اب بھی ان نوکریوں کوختم کرنا چاہتی ہے۔ ان کا مواقف ہے کہ 4000سے زائد محنت کش کے ای ایس سی پر بوجھ ہیں،جبکہ حقیقت یہ ہے کہ انتظامیہ نے 6000سے زائدملازمین کوکنٹریکٹ کی بنیاد پر بھرتی کیا ہے،جو غیر تجربہ کار ہیں اور اس کی جہ سے کراچی کے شہری بجلی کی سپلائی کے حوالے سے مشکالات کا شکار ہیں۔
اس کے علاوہ 650سے زائد لوگوں کو بھاری تنخواہوں پر ملازم رکھا گیا،یہ سب بڑے سیاستدانوں ، سول و ملٹری بیوروکریسی کی اولادیں ، رشتہ دار اور ملٹری کے رٹیائرڈ افسران ہیں۔حکومت اس معاملے میں انتظامیہ کی حمایت کرہی ہے
سی بی اے اور دیگر یونینز نے انتظامیہ کے ناروا رویہ کے خلاف اتحاد تشکیل دے دیا۔40سے زائدمحنت کشوں کے نمائندے 29اپریل سے پریس کلب پر بھوک ہڑتال پر ہیں ۔اس سلسلے میں پچھلے ایک ماہ کے دوران محنت کش بڑے پیمانے پر محرک ہوئے ، بڑے جلسے اورجلوس منعقد ہوئے۔جس میں ہزاروں کی تعداد میں محنت کش شریک ہورہے ہیں۔
آج کی ہڑتال کی اپیل سیاسی جماعتوں اور ٹریڈیونینز نے سرپلس پول کا خاتمے،کے ای ایس سی کو دوبارہ ریاستی کنٹرول میں لینے اور محنت کشوں کے تمام مطالبات کی منظوری کے لیے کی تھی۔ہڑتال کی کامیابی پاکستانی سیاست میں ایک طاقتور ابھرتے محنت کش طبقے کی نشاندہی کررہی ہے۔جو پاکستان میں سماجی تبدیلی میں ہراول کاکردار ادا کرسکتا ہے۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: