چیک رپبلک میں نیولبرل حکومت کے خلاف ابھرتی ہوئی جدوجہد

تحریر:پاویل سینڈڈ
چیک رپبلک میں 1989کے مخملی انقلاب کے بعد سب سے بڑے عوامی مظاہرہ دیکھنے میںآیا۔پراگ میں120000سے زائد لوگ شہر کے مرکز میں سٹاپ دی گورنمنٹ ،جو ٹریڈیونینز،سماجی تحریکوں اور نام نہاد شہری اتحاد پر مشتمل ہے۔جس کا مقصد نیولبرل اصلاحات کا خاتمہ،کٹوتیوں کے پروگرام،حکومت کے خاتمے اور نئے انتخابات کا انعقاد تھا۔
Petr Necas’s کی دائیں بازو کی مخلوط حکومت2010کے وسطہ میں میڈیا کی جھوٹی اور بدیانتی پر مبنی کمپین ،جسے آج عمومی طور پر ’’یونانی جھوٹ ‘‘کہا جاتا ہے کہ نتیجے میں قائم ہوئی،چیک کے دائیں بازو کے سیاست دانوں نے دعوی کیا کہ اگر لیفٹ جیت گیا تو چیک رپبلک بھی یونان کی طرح دیوالیہ ہوجائے گا۔
Necas146s کی حکومت نے عوام پر بڑے پیمانے پر نیولبرل حملے کیے جیسے عوامی خدمات پر حملہ،مفت تعلیم،پینشن میں کٹوتی اور بے روزگاروں کا مذاق بنایا گیا،اس کے علاوہ بنیادی ضرورت کی اشیاء پرVATمیں اضافہ کیا گیا۔جبکہ امیروں کو ٹیکس میں چھوٹ دی گی۔
حکومت کے قیام کے دو سال میں پبلک قرض میں اضافہ ہوا،عام لوگ بڑے پیمانے پر دیوالیہ ہوئے اور بے گھری میں اضافہ ہوا۔اس وقت حکومت کی حمایت 20فیصد سے بھی کم ہے۔
حکومت کو اس وقت بے شمار کرپشن سکینڈلز کا سامنا ہے،حکومت کی ایک اتحادی جماعت پبلک افیئر پارٹی کے بارے میں عوامی سطح پر انکشاف ہوا ہے ، وہ ایک نجی سیکورٹی کمپنی کے ملک کے طور پر سامنے آئی ہے بجائے ایک سیاسی جماعت کے ۔Necas146sکی ڈیموکریٹک پارٹی کو بدنام بزنس مین جن کو گاڈفادر کہا جاتاہے کا سیاسی ترجمان سمجھ جاتا ہے۔حکومت کا وزیر خزانہ جو کرپٹ ترین شخص ہے اس کو دنیا کا بہترین فنانس منسٹر کہاجاتا ہے۔
حکومتی سیاست دانوں نے اس مظاہرے کوبائیں بازو کی طرف سے کمپین کہہ کر رد کرنے کی کوشش کی ہے،جس بجٹ کا کوئی سنجید ہ متبادل پیش نہیں کیا۔یہ ایک بڑا ہی تکبرانہ بیان ہے جس کے ذریعے حکومت نے چیک میں پچھلے 20سال میں ہونے والے سب سے بڑے مظاہرے کو مسترد کردیا۔
حکومت اپنی دو پالیسیوں یعنی پنشن اصلاحات جس کا مطلب حقیقت میں پنشن کے نظام کی نجکارری ہوگا اور کیتھولک چرچ کو معاوضہ ادا کرناجس سے بڑئے پیمانے پر سرمایہ چرچ کو منتقل ہوگا خاص کر ایک ایسے ملک میں جہاں عوام کی بڑی تعداد چرچ کو تسلیم ہی نہیں کرتی۔
سٹاپ دی گورنمنٹ کولیشن،حکومت کی ہٹ دھرمی کا جواب ہے،تاکہ اس پر عوامی دباؤ ڈالا جا سکے۔اگلے ہفتوں سیکڑوں چھوٹے مظاہروں اور دیگر پروگراموں کو انعقاد کیا جائے گا،تاکہ جون کے وسطح میں ایک بڑی عوامی تحریک جس میں ہڑتال، مظاہرے ، گھیراواور سول نافرمانی بھی شامل ہوگا کہ لیے زمین تیار کی جائے کیا ۔
اگر یہ ہڑتال کامیاب ہوئی تو اس کے پورے یورپ پر اثرات ہوں گے، کیونکہ چیک رپبلک یورپ کے مرکزمیں واقع ہے۔یہ ہڑتال اہم کار مینو فیکچرینگ انڈسٹری کی پیدوار کوپورے یورپ میں بند کرنے کا باعث بن سکتی ہے۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: